گردن میں اچانک درد کی وجہ کیا ہے اور اس سے کیسے نجات حاصل کی جائے؟

گردن میں اچانک درد کی وجہ کیا ہے

گردن میں اچانک درد کی وجہ کیا ہے اور اس سے کیسے نجات حاصل کی جائے؟

 

جاگنے کے بعد جب اس نے اپنی گردن کو حرکت دی تو سائلہ کا درد شروع ہوا۔ میں نے سوچا کہ تھوڑی دیر کے بعد یہ دور ہو جائے گا لیکن جوں جوں دن چڑھتا گیا درد اور تکلیف بڑھنے لگی۔ جب گردن ایک طرف سے دوسری طرف موڑ دی جاتی ہے تو پٹھوں میں تناؤ محسوس ہوتا ہے۔ کچھ دنوں کے بعد جب اس کی گردن کا درد دور نہ ہوا تو وہ سوچ میں گم ہوگیا۔ شائلہ کا حال کم و بیش ہم سب کے ساتھ ہوتا ہے۔ لیکن یہ اچانک گردن میں درد کیوں ہے؟ اس سے نجات کا طریقہ کیا ہے؟ فزیو تھراپی کنسلٹنٹ اور جیرونٹولوجسٹ سے اس بارے میں کچھ اہم معلومات حاصل کریں۔

گردن میں درد کیوں ہوتا ہے؟

انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اس دور میں ہم اپنے دن کا زیادہ تر حصہ الیکٹرانک آلات کے سامنے بیٹھ کر گزارتے ہیں۔ ہو سکتا ہے کہ کوئی فوری نقصان نہ ہو، اور اس لیے ہم اسے اتنی اہمیت نہیں دیتے۔ لیکن یہ وجوہات گردن کے درد کی بڑی حد تک ذمہ دار ہیں۔ اس کے علاوہ گردن میں درد دیگر کئی وجوہات کی وجہ سے بھی ہو سکتا ہے۔ آئیے جانتے ہیں ان وجوہات کے بارے میں-

1) گردن کے درد کی ایک وجہ کرسی پر ٹھیک طرح سے نہ بیٹھنا ہے۔ عام طور پر ہم بیٹھے ہوئے اپنی ریڑھ کی ہڈی کو سیدھا نہیں رکھتے۔ اس میں اکثر سر آگے جھک جاتا ہے۔ یہ طویل مدتی گردن کے درد کا سبب بن سکتا ہے۔

2) کمپیوٹر یا موبائل استعمال کرتے ہوئے اگر گردن زیادہ دیر تک جھکی رہے تو گردن اکڑ جاتی ہے اور درد ہو سکتا ہے۔

3) بہت سے لوگ ٹیلی ویژن دیکھتے ہوئے ٹھیک سے نہیں بیٹھتے ہیں۔ گردن بھی غیر معمولی حالت میں ہے۔ جس سے درد بھی ہوتا ہے۔

4) بہت سے لوگ اضافی اونچے تکیے کے بغیر سو نہیں سکتے۔ سوتے وقت تکیے کے ایسے غلط استعمال سے گردن کا درد شروع ہو سکتا ہے ۔

5) خواتین کے نیچے جھکنا اور اپنے کولہوں کو کاٹنا گردن میں مستقل درد کا باعث بن سکتا ہے۔

6) اگر آپ آگے جھک کر زیادہ دیر تک کام کرتے ہیں تو گردن کے پٹھے تنگ ہوجاتے ہیں۔ نتیجہ گردن میں درد ہے۔

7) شدید گرمی میں بیٹھنے پر بھی گردن میں درد ہو سکتا ہے یا گردن کو حرکت دینے میں دشواری ہو سکتی ہے۔

8) درد اس وقت ہوتا ہے جب گردن زخمی ہو جائے، پٹھے اچانک پھٹ جائیں یا موچ آ جائے۔

9) اسپونڈیلوسس، گردن کی ہڈی یا ڈسک کے مسائل، اسپائنل کینال سٹیناسس، سروائیکل ریب، نیورائٹس، بون ٹی بی بھی گردن کے درد کی وجوہات ہیں۔

10) گردن میں چوٹ یا صدمہ، پٹھوں کا جزوی یا مکمل پھٹ جانا درد کا باعث بنتا ہے۔

11) تناؤ اور اضطراب بھی بعض اوقات گردن کے پٹھوں میں تناؤ کا سبب بن سکتا ہے، جو گردن میں درد کا باعث بن سکتا ہے۔

 

درد سے نجات کے طریقے

اگر آپ کو گردن میں درد ہے تو آپ کو شروع سے ہی محتاط رہنا چاہیے۔ اس لیے گردن میں درد سے بچنے یا درد ہونے کی صورت میں اسے ختم کرنے کے لیے کچھ اصولوں پر عمل کرنا چاہیے۔

1) گردن کے درد کو کم کرنے کے لیے گردن کی باقاعدہ ورزشیں کی جانی چاہئیں۔ گردن کے لیے کچھ مشقیں ہیں، جیسے سر کو گھمانا یعنی سر کو ایک بار دائیں جانب سے بائیں جانب اور دوبارہ بائیں جانب سے دائیں جانب۔ کام کے درمیان ورزش کرنے کی کوشش کریں ۔

2) کمپیوٹر پر کام کرتے وقت صحیح کرنسی میں بیٹھیں۔ آپ کو کرسی پر اپنی پیٹھ کے ساتھ سیدھا بیٹھنا چاہئے۔ بیٹھتے وقت آپ پیٹھ کے پیچھے چھوٹا تکیہ یا کشن استعمال کر سکتے ہیں۔ اس سے کمر سیدھی رہے گی۔ اس طرح بیٹھیں کہ کمپیوٹر اسکرین کا اوپری حصہ آنکھ کی گولی سے کم ہو۔ برقی آلات سے تقریباً ایک ہاتھ یا اٹھارہ انچ دور بیٹھیں۔ آدھے گھنٹے کے بعد ایک منٹ کے لیے کھڑے ہو جائیں۔

3) سوتے وقت صرف ایک تکیہ رکھ کر سو جائیں۔ سونے کی کرنسی درست ہونی چاہیے۔ آپ کو اپنی پیٹھ یا پہلو پر سونا چاہئے، اپنی پیٹھ پر نہیں۔ عام طور پر بہت سے لوگ بہت اونچے تکیے پر سر رکھ کر سوتے ہیں۔ بہت سے لوگ بہت پتلے تکیے استعمال کرتے ہیں۔ کچھ لوگ رات کو ٹی وی دیکھنے کے لیے صوفے پر جھک گئے۔ ان سے بچنا چاہیے۔

 

4) اگر گردن میں درد کثرت سے ہو تو بقا تکیہ کا استعمال کریں۔

5) اگر آپ درد برداشت نہیں کر سکتے تو آپ ڈاکٹر کے مشورے کے مطابق ینالجیسک دوا لے سکتے ہیں۔

درد سے نجات کے لیے فوری حل 

اگر گردن میں اچانک درد ہو تو درد والی جگہ پر برف لگائیں۔ دن میں 3/4 بار برف لگانے سے درد کم ہو جائے گا۔ اگر درد طویل ہو تو درد والی جگہ پر گرم کمپریس لگائیں، اس سے درد میں کچھ آرام آئے گا۔ لیکن یاد رکھیں، گردن کے دائمی درد کا جلد علاج کیا جانا چاہیے۔ ورنہ مسئلہ مزید پیچیدہ ہو جائے گا۔ ایک اور بات، چلتے وقت اپنے جسم کو سیدھا رکھیں۔ جھکاؤ، جھکاؤ یا جھکاؤ نہ کرو۔ گردن میں درد روزمرہ کی زندگی میں مختلف وجوہات کی وجہ سے ہوسکتا ہے۔ لیکن وجہ کچھ بھی ہو، اسے جاننے کی کوشش کرنی چاہیے اور اسی کے مطابق علاج کرنا چاہیے۔

گردن کے درد کو کم کرنے کے لیے کتنی بار اور کس طرح ورزش کرنی ہے یہ فزیو تھراپسٹ سے معلوم ہونا چاہیے۔ درد کے دوران بہت زیادہ ورزش کرنا درد کو مزید خراب کر سکتا ہے۔ ایسی صورت میں ماہر فزیو تھراپسٹ سے مشورہ لیں کہ آپ کے لیے صحیح ورزش کیا ہو گی۔ آگاہ رہیں، صحت مند رہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں